Impact covid - 19 on economic

پاکستا ن اور عالمی معیشت پر کو رونا وائرس کے اثرات۔

کورونا وائرس گذشتہ سال کے آخر چین سے اُٹھنے والا ایک ایسا وائرس تھا جس نے کم ہی وقت میں دنیا کی تمام بڑی طاقتوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ کو رونا وائرس کی وبا کو پہلے تمام بڑی طاقتوں نے پہلے ایک عام سی بیماری ہی جانا تھا لیکن وقت کے ساتھ ہی اس وبا نے پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لینے کے ساتھ ،دنیا کی طاقتوں کو اس بات پر سوچنے پر مجبور کر دیا کہ اُن کے پاس بنیادی صحت کے وسائل ناکافی ہیں ۔

عالمی ادارے صحت نے بھی اس بات کا برملا اظہار کیا کہ دنیا کی تمام طاقتیں اس بات پر ناز کرتی ہیں کہ وہ صحت کے معاملے میں سب سے کامیاب ہیں لیکن کو ورنا کوائرس کی وبا نے ہر ملک کی قابلیت کو ظاہر کردیا ہے ۔

کو رونا وائرس کی وبا کو بہت سے ممالک نے کافی سنجیدگی کے ساتھ حل کرنے کی بھرپور کوشش کی ہے ، ان ممالک میں اگر چین اور نیوزی لینڈ کا نام لیا جائے تو غلط نہ ہو گا۔ دونوں ممالک نے اس وبا کو کافی مہارت اور سنجیدگی کے ساتھ حل کیا ہے۔

ایک طرف چین جس نے ہسپتالوں کے نظام کو بہتر کیا اور محدود وقت میں کو رونا وائرس کے مریضوں  کہ لیے الگ ہسپتال تعمیر کروایا تو دوسری طرف نیوزی لینڈ کی حکومت نے فوری اقدامات کے ساتھ ہی اس وبا کا سامنا کیا اور دنیا کا پہلا ملک بنا جو کارونا وائرس سے سب سے پہلے اور کم وقت میں آذاد ہو ا۔

صحت کے میدان میں تو دنیا نے کافی مشکلات کا سامنا کیا ہے لیکن اسی کہ ساتھ عالمی معیشت کو کافی زیادہ نقصان بھی اُٹھانا پڑا ہے ۔ 2009 کہ عالمی معیشت کہ بہران کہ بعد یہ وہ پہلا موقع تھا جب عالمی سطح پر حالت ناقابل یقین ہو گئے تھے ۔

کورونا وائرس کی وبا کہ عالمی معیشت پر اثرات اس قدر غیر یقینی ہوگئے تھے کہ لاکھوں کی تعداد میں لوگوں کو اپنی نوکری سے ہاتھ دہونا پڑا ۔ لاکھوں کی تعداد میں لوگ بے روزگار ہوئے ، ہزاروں کی تعداد میں کمپنیوں کا دیوالیا نکال گیا ۔

لوگ ایک جانب صحت کی مسائل سے نمٹ رہے تھے تو دوسری جانب اُن کو یہ پریشانی تھی کہ روزگار کے حوالے سے کیسے معاملات کو درست کیے جایئں .

پاکستان میں بھی کو رونا وائرس کی وبا کے کافی بُرے اثرات مرتب ہو ئے۔ پاکستان میں کورونا کی وبا کے پیش نظر لوگوں کو کافی سنگین مسائل کا سامنا کرنا پڑا ۔ چونکہ پاکستان کا شمار دنیا کے ترقی پذیر ممالک کی سمت میں ہوتا ہے تو اس حوالے سے پاکستان کو ہر محاذ پر کافی پریشانیوں کا سامنا کرتا پڑا ۔

پاکستانی حکومت کے پاس صحت کہ نامکمل وسائل اور ساتھ ہی لوگوں کے گھروں تک راشن پہنچانے میں ناکامی ، بنیادی وجوہات تھے جس کی وجہ سے لوگوں کو کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ پاکستان میں قریبا 16 لاکھ لوگ کارونا کی وبا کے پیش نظر نوکریوں سے نکالے گئے ہیں اور اس کی بنیادی وجہ پاکستان کی معیشت اور محفوظ جاب نہ ہو نا ہے ۔

اس دوران پاکستانی حکومت کی جانب سے صحت کو مدنظر رکھتے ہوئے لاک ڈاون کر دینا ایک بہترین عمل تھا ۔ پاکستان کے بہت سے طبقات اس عمل کی حمایت کرتے ہیں اور بہت سے طبقات اس عمل کی مخالفت کرتے ہیں، پچھلے چھ ماہ میں پاکستانی معیشت پر بہت سے بڑے اثرات مرتب ہوئے جس کہ اثرات لوگوں پر پڑے ۔

عالمی معیشت پر کورونا کی وبا کہ اس قدر بُرے اثرات مرتب ہوئے جس کی مثال نہیں ملتی ہے ۔ اسی دوران عالمی منڈی میں پیٹرول کی قیمتوں میں اس قدر مندی ہوئی کہ خام تیل کی قیمتیں منفی میں چلی گیں ۔ یہی حال دنیا بھر کے تمام کاروبار وں میں رہا ۔

پاکستان بھی کارونا کی اس وبا کے پیشہ نظر اپنے ملازمت پیشہ طبقہ کہ حالت میں بہتری لانے میں ناکام دکھائی دیا کیونکہ بہت سے ملازمت پیشہ افراد اپنی نوکری سے ہاتھ کھو بیٹھیں ہیں ۔

مستقبل میں اس بات کی امید ظاہر ہوتی ہے کہ پاکستان میں نوکریاں دوبار سے آیئں گی کیونکہ کورونا کی وبا اپنے اختتام کو جارہی ہے اور یہی وجہ ہے کہ پاکستان اپنی معیشت کو دوبار کھڑا کرنے کی بھرپور کوشش کرے گا

انگریزی میں نوکریوں کے بارے میں معلومات یہاں کلک کریں

۔

اس کہ ساتھ ہی نجی اداروں کی بھی یہی کوشش ہو گی کہ اپنے کام کو مستحکم کیا جائے تاکہ ہر چیز اپنے بہتر وسائل کا استعمال کرسکے۔ مستقبل میں اس بات کی یقینی اُمید کی جاسکتی ہے کہ سرکاری سطح پر اور نجی سطح پر جابر آیں گی لیکن اس کہ ساتھ ہی تمام ماہرین اور تجزیہ نگاروں کی یہی کوشش رہتی ہے کہ نوجوان نسل کو کاروبار کی طرف راغب کیا جائے تاکہ ملک کا مستقبل سنورتا رہے اور ملک کی بنیادیں مضبوط ہو سکیں۔

2 thoughts on “پاکستا ن اور عالمی معیشت پر کو رونا وائرس کے اثرات”

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

You have successfully subscribed to the newsletter

There was an error while trying to send your request. Please try again.

We will notified you when new / latest job is published on our website? Enter your email address to be the first to know.